وَماَ کَانَ رَبُّک نَسِیّاً

پھر وہ وقت بھی آتا ہے جب ہم دُنیا سے لڑنا چھوڑ دیتے ہیں…!! جب ہم اپنے کردار کی وضاحتیں نہیں دیتے اور نہ ہی اپنی نیت کی پاکیزگی دوسروں کے سامنے رکھتے ہیں , ﷲ رب العزت سب جانتےہیں بس یہ بات سوچ کر ہم اتنے مضبوط ہو جاتے ہیں کہ پھر لوگوں کی باتیں تنگ نہیں کرتیں , پھر چاہے وہ کتنی ہی بُری اور جُھوٹی کیوں نہ ہوں , مجھے ہمیشہ حیرت ہوتی ہے اپنے اردگرد کے لوگوں کو دیکھ کر اور بیک وقت دل خوف زدہ بھی ہوتا ہے یہ سوچ کر کے کیسے لوگ خود کو اچھا ثابت کرتے کرتے اتنا گر جاتے ہیں کہ وہ انسان بھی نہیں رہتے…!!

کیسے دوسروں کے عیبوں کو عیاں کر کے ایک ہنستے مسکراتے شخص کو وقت سے پہلے ہی مار دیا جاتا ہے , کتنے خود غرض ہو جاتے ہیں ہم کہ یہ بھی نہیں سوچ پاتے کہ آج جس دوراہے پر وہ شخص کھڑا ہے کل ہم بھی وہاں ہو سکتے ہیں_ نہیں….! یہ تو ہم نے سوچنا ہی نہیں ہے , ہم تو ﷲ رب العزت سے دعا کرتے ہیں بدلے کی اور پھر دوسروں کو دنیا کے سامنے ذلیل کر کے ﷲ رب العزت سے یہ اُمید رکھتے ہیں کہ وہ ہمارا پردہ رکھ لے….!!

شاید یہ لوگوں کی باتیں اور یہ ٹھوکریں ہی ہمیں مضبوط بنا دیتی ہیں اتنا مضبوط کے ہم اپنی ذات پر اُٹھنے والے سوالوں کا بھی جواب نہیں دیتے اور شاید جواب دینا بھی نہیں چاہیے…! کیونکہ کچھ سوالوں کے جواب وقت اور ﷲ رب العزت دیتا ہے اور پھر جب جواب عرش سے اترتے ہیں تو کوئی دلیل کام نہیں آتی….! پھر ڈرنے کا وقت ہوتا ہے….ا
وہ رحیم تو ہے پر اسے ڈرانا بھی خوب آتا ہے…..اس کا نام القہار بھی ہے…اور بیشک وہ بھولنے والا نہیں…!! وہ ہر آنسو ہر اذیت بھری سسکی کا گواہ ہے….!!

وہ فرماتا ہے کہ:
وَماَ کَانَ رَبُّک نَسِیّاً
“اور تیرا رب بھولنے والا نہیں “🌸

رحاب

Leave A Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *